پاکستان اور چین کوئی منصوبہ بنارہے ہیں، بھارت کو تشویش

0

اسلام آباد: چین اور پاکستان کوئی بڑا منصوبہ بنارہے ہیں، بھارت میں تشویش کی لہر دوڑ گئی، بھارتی میڈیا نے چینی وزیردفاع کے دورہ پاکستان اور اس سے ایک روز پہلے آئی ایس آئی ہیڈ کوارٹر میں ہوئے سیاسی اور فوجی قیادت کے اجلاس کو غیر معمولی قرار دینا شروع کردیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق لداخ تنازعہ کے تناظر میں چین کے ساتھ جاری کشیدگی کے دوران چینی وزیردفاع جنرل وی فینگ کے دورہ پاکستان کو بھارتی حکام اور میڈیا اہم قرار دے رہے ہیں، اور انہیں شبہ ہے کہ پاکستان اور چین مل کر اس کے خلاف کوئی منصوبہ بنا رہے ہیں، بھارتی میڈیا میں حکام کے حوالے سے اس طرح کی رپورٹیں سامنے آرہی ہیں، جن میں بھارتی حکام کی تشویش جھلکتی نظر آتی ہے، اس دورے کے دوران ہی بھارتی فضائیہ کی طرف سے یہ رپورٹ سامنے آئی کہ پاک فضائیہ کے طیارے نے پونچھ سیکٹر میں داخل ہوکر کچھ دیر پرواز کی ہے، اور اس کے بعد وہ واپس چلا گیا، بھارتی فوجی حکام کا کہنا ہے کہ وہ اس بات کی تحقیقات کررہے ہیں کہ آیا یہ غلطی سے ہوا ہے، یا پاک فضائیہ نے جان بوجھ کر اس کی حدود میں مداخلت کی ہے۔

بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ چین اور پاکستان کا فوجی تعاون دہائیوں پرانا ہے، لیکن آج تک دونوں ملکوں کی طرف سے دفاعی شعبہ میں تعاون کے کسی معاہدے کا اعلان نہیں کیا گیا، لیکن یہ پہلی بار ہے کہ چینی وزیردفاع کی پاکستانی فوجی قیادت سے ملاقات کے بعد جو بیان سامنے آیا، اس میں بطور خاص دونوں ملکوں کے درمیان فوجی تعاون بڑھانے کے لئے کئی سمجھوتوں کا اعلان کیا گیا ہے، اگرچہ ان کی تفصیلات نہیں بتائی گئیں، بھارتی حکام کو شبہ ہے کہ تعاون کو باقاعدہ اور اعلانیہ سامنے لانے کی حکمت عملی کا مقصد بھارت کو پیغام دینا ہے۔

بھارتی میڈیا آئی ایس آئی ہیڈکوارٹر میں ہوئی اس بریفنگ پر بھی بات کررہا ہے، جس میں پاکستان کی سیاسی و فوجی قیادت   نے کئی گھنٹوں تک مشاورت کی، یہ اجلاس چینی وزیردفاع کے اسلام آباد پہنچنے سے چند گھنٹے قبل ہوا تھا، اس کے علاوہ   بھارتی میڈیا اس معاملے کو بھی اٹھا رہا ہے کہ چینی وزیردفاع نے پاکستان سے قبل نیپال کا بھی دورہ کیا، جہاں ان کی نیپالی قیادت سے ملاقات ہوئی، اس دورہ میں چینی وزیردفاع نے نیپال کی سلامتی اور اس کے مفادات کے تحفظ کے لئے ہر ممکن تعاون کا اعلانیہ یقین دلایا، یہ  یقین دہانی ایسے موقع پر کرائی گئی، جب نیپال کے ساتھ بھی بھارت کے تعلقات کچھ ماہ سے تناؤ کا شکار رہے ہیں۔ چینی اخبار گلوبل ٹائمز نے اپنی رپورٹ میں بالخصوص نیپال کے کالاپانی کے علاقے میں بھارت کے ساتھ جاری سرحدی تنازعہ کا ذکر کیا ہے، چینی وزیردفاع نے اس دورہ میں نیپالی فوج  کو مضبوط بنانے کے لئے تعاون میں اضافے   کا بھی یقین دلایا، چین نے حال ہی میں نیپالی فوج کو تھرمو میٹر اور خصوصی لباس بھی فراہم کئے ہیں۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.